کیا سگریٹ پینے والی عورت بدکردار ہوتی ہے ؟

0
172

Is it right for a woman to smoke cigarettes?

میرا شمار ان لڑکیوں میں ہوتا ہے جو روایات کوالفاظ بہ الفاظ تسلیم کرنے کے بجاۓ ان سے ٹکرا جانے کو ہی زیادہ بہتر سمجھتی ہیں اور اسی کے سبب معاشرے میں تنقید کا نشانہ بھی بنتی نظر آتی ہیں میرے قریب ہمارے بہت سارے ایسے روائج ہیں جو کہ اللہ تعالی کی جانب سے نہیں بلکہ اس معاشرے کے ٹھیکیداروں کی جانب سے خاص طور پر عورتوں پر نافذ کیۓ گئے ہیں۔

میں اپنے ماں باپ کی اکلوتی بیٹی ہوں لیکن ایسا نہیں ہے کہ انہوں نے میری پرورش بہت ناز و نعم سے کی بلکہ میں نے جب سے یہ ہوش سنبھالا اپنے والد کو ھمارے گھر میں بات بات پرگالی گلوچ کرتے اور گالیاں دیتے امی کو پیٹتے دیکھا ایسا نہیں ہے کہ میرے والد کسی قسم کے نشے کے عادی تھے، سگریٹ کے علاوہ میں نے ان کو کبھی بھی کوئی بھی نشہ کرتے نہیں دیکھا، بس وہ غصے کے بہت تیز ہوا کرتے تھے اور آۓ دن کسی نہ کسی سے جھگڑا کرکے آجاتے تھے جس کے سبب گھر کے ماحول میں ہر وقت ایک تناؤ کی کیفیت ہی ہوا کرتی تھی۔

ہونا تو یہ چاہیۓ تھا کہ ایسے ماحول میں پرورش لینے کے سبب میں ایک خاموش اور ڈری سہمی لڑکی کی صورت میں بنتی مگر نتیجہ اس کے برعکس نکلا اور میرے اندر بغاوت سرائیت کرتی گئی اور مجھے بھی غلط کو تسلیم کرنے کے بجاۓ اس سے ٹکرانے کی عادت پڑ گئی جس کے سبب اب والد کی مارپیٹ ماں کے ساتھ ساتھ مجھے بھی پڑنے لگ گئی۔

ابو سے مار پیٹ کھانےکے بعد رونےدھونے کے بجاۓ میں ابو کے سگریٹ کے پیکٹ میں سے کچھ سگریٹ چوری کرلیتی اور گھر کی چھت پر جا کر سگریٹ پی لیتی جس کے سبب میرے اندر کا غصہ اور دکھ درد کم ہو جاتا اور اس طرح نامعلوم انداز میں میں اس کی عادی بھی ہونے لگ گئی، اب جب بھی کسی بھی حوالے سے میں دباؤ کا شکار ہوجاتی تو میں ابو کے پیکٹ میں سے چند سگریٹ غائب کر لیتی۔

میری والدہ محترمہ میری اس کمزوری کواچھی طرح جانتی تھیں مگر وہ اس وجہ سے خاموش رہتی تھیں کہ وہ یہ جانتی تھیں کہ ابو کی وجہ سے جو کچھ مجھے برداشت کرنا پڑتا ہے اس کے سامنے یہ سگریٹ کچھ بھی نہیں، انہوں نے کئی بار مجھے منع کرنے کی کوشش بھی کی اور میں ان سے وعدہ بھی کر لیا تھا کہ آئندہ اس سگریٹ کو ہاتھ تک نہیں لگاؤں گی مگر پھر گھر میں کچھ نہ کچھ ایسا ماحول پیدا ہو جاتا کہ جس کے سبب مجھے چھت پر بھاگنا پڑتا تھا۔

اسی طرح وقت کے ساتھ ساتھ میں یونیورسٹی تک جا پہنچی تھی، میرے والد اگرچے بوڑھے ہو گۓ تھے مگر انھون نے ان کے غصے کو کم کرنے کے بجاۓ مذید بڑھا دیا تھا اور ان کے غصے کے ساتھ ساتھ میری سگریٹ نوشی کی یہ عادت بھی بڑھتی چلی جا رہی تھی۔

اب تو یونیورسٹی کے دوستوں کے ساتھ ان کے سامنے بھی میں سگریٹ کے کش لگا لیا کرتی تھی اور مجھے اس میں کوئی بھی برائی نظر نہیں آتی تھی اگرچہ اس عادت کے سبب دوسری لڑکیاں مجھ سے دور رہنے کی کوشش کرتی تھیں کیوںکہ ان کے مطابق چونکہ میں سگریٹ نوشی کرتی تھی اس لیۓ میرا کردار انکے سامنے خراب تھا۔

لیکن مجھے ان لڑکیوں سے کسی قسم کا سرٹیفیکیٹ نہیں چاہیۓ تھا اس وجہ سے میں نے ان کی بات پر کان ہی نہیں دھرے، مجھے سمجھ نہیں آتا تھا کہ جو چیز مردوں کے لیۓ ان کی کشش بڑھانے کا سبب بنتی ہے لیکن اگر وہی کچھ ایک لڑکی کرے تو اس میں پورا معاشرہ سوال کرتا نظر آتا ہےاور اعتراض کی تلوار لیۓ کیوں اٹھ کھڑا ہوتا ہے۔

گھر میں میرے رشتے کی بات چیت چل رہی تھی، لڑکا اچھے کھاتے پیتے گھرانے کا تھا امی ابو نے بھی لڑکے کو دیکھ کر ھی پسند کر لیا تھا اور میں بھی ان کو پسند آگئي تھی مگر لڑکے نے مجھسے ایک بار ملنے کی شرط رکھی تھی جس پر مجھےبھی کوئی اعتراض نہیں تھا، لہذا اس دن وہ لڑکا مجھے میرے گھر سے اپنے ساتھ ڈنر کروانے کےلیۓ ہوٹل لے گیا۔

مجھے بھی وہ بہت اچھا نیک اور شائستہ انسان لگا، میرے والد کے بر عکس وہ نرم مزاج انسان تھا کھانا کھانے کے بعد واپسی پر اس نے مجھ سے پان کھانے کا پوچھا میرے اقرار پر وہ پان لینے گاڑی سے اترا، جب واپس آیا تو میرے لیۓ پان اور اپنے لیۓ سگریٹ لے آیا، اس موقعے پر میں خود کو قابو میں نہ رکھ سکی اور میں نے اس سے ایک سگریٹ مانگ لیا۔ اس نے میری طرف بے یقینی سے دیکھا اور مجھے جانچنے کے لیۓ میری طرف سگریٹ بڑھا دیا تھا۔

جسکو میں نےانتہائي مہارت کے ساتھ سلگاتے ہوۓ اس کے دھویں کو جب اپنے اندر اتارا تو مجھے لگا کہ وہ گاڑي چلاتے ہوۓ بے ہوش ہونے کے قریب ہے تو اس موقعے پر میں نے اس شخص کو اپنی اس عادت کے بارے میں تمام تر معاملا بتا دیا جس پر اس نے کچھ بھی نہیں کہا اور خاموشی سے مجھے گھر چھوڑ دیا اور چلا گیا۔

اگلے دن اس کی ماں نے فون کر کے میری امی کو رشتے سے منع کر دیا اور کہا کہ میرے بیٹے کا کہنا ہے کہ سگریٹ پینے والی لڑکی سے وہ شادی بلکل بھی نہیں کر سکتا۔

جب عورت ایک سگریٹ پینے والے مرد سے شادی کر سکتی ہے تو مرد سگریٹ پینے والی عورت سے شادی کیوں نہیں کر سکتا۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here