میشا شفیع نے لکس اسٹائل ایوارڈز سے اپنا نام مسترد کردیا

0
89

رواں سال جلد منعقد ہونے والے نامور پاکستانی ایوارڈ لکس اسٹائل سے جڑے تنازعات میں اب ایک کے بعد ایک اضافہ ہوتا جارہا ہے اور اب پاکستانی سنگر میشا شفیع نے بھی ایوارڈز انتظامیہ سے اپنی نامزدگی ہٹانے کا مطالبہ بھی کردیا۔

رواں سال جلد منعقد ہونے والے نامور پاکستانی ایوارڈ لکس اسٹائل سے جڑے تنازعات میں اب ایک کے بعد ایک اضافہ ہوتا جارہا ہے اور اب پاکستانی سنگر میشا شفیع نے بھی ایوارڈز انتظامیہ سے اپنی نامزدگی ہٹانے کا مطالبہ بھی کردیا۔

گلوکارہ میشا شفیع کو حال ہی میں سامنے آئے خواتین کے لیے بنائے جانے والے گانے ’میں‘ کو لکس اسٹائل ایوارڈز کی تقریب میں بہترین سنگنگ کے لیے نامزد کیا گیا تھا۔
پاکستانی ماڈل ایمان سلیمان نے سب سے قبل ایوارڈز کی تقریب سے بیسٹ ایمرجنگ ٹیلنٹ ان فیشن میں اپنی نامزدگی سے خود کو دستبردار کرنے کا اعلان کیا جس کی وجہ انہوں نے یہ بات بتائی تھی کہ وہ جنسی ہراساں کرنے والے کے ساتھ لکس ایوارڈ کا حصہ نہیں بننا چاہتیں۔

گلوکارہ میشا شفیع کا اس حوالے سے سوشل میڈیا پر یہ کہنا تھا کہ ”اس پرفیکٹ دنیا میں میں عورتوں کو اپنے کام کی جگہ پر ہی محفوظ دیکھنا چاہتی ہوں، ہمارا بائیکاٹ ہماری محنت کوکبھی چھپا نہیں سکتا، ایسی بہادر خواتین کی وجہ سے میں یہ سمجھتی ہوں کہ ہم جلد وہ مقام حاصل کرلیں گے”۔

میشا شفیع کا اپنے گانے ’میں‘ کے حوالے سے کہنا تھا کہ ‘میں’ گانا اپنی اصل پہنچان کو ڈھونڈنا ہے، خود کا ہیرو بننا، میں نے یہ تب لکھا تھا جب میں اپنی اصل زندگی میں ایک مشکل دور سے گزر رہی تھی۔

میشا شفیع نے لکس اسٹائل ایوارڈز کی انتظامیہ سے درخواست کی ہے کہ انکی نامزدگی اور انکا گانا ایوارڈ کی نامزدگیوں سے مسترد کر دیا جائے۔

یاد رہے کہ گزشتہ برس اپریل میں میشا شفیع نے سوشل میڈیا پر گلوکار علی ظفر پر جنسی ہراساں کرنے کا الزام عائد کرکے پاکستان میں می ٹو مہم کا آغاز کیا تھا۔

گلوکارعلی ظفر نے اس الزام کو مسترد کیا تھا، جس کے بعد ان دونوں گلوکاروں کا معاملہ ابھی تک عدالت میں محفوظ ہے۔

گلوکارعلی ظفر کو رواں سال کے لکس اسٹائل ایوارڈز میں اپنی فلم ’طیفا ان ٹروبل‘ کے لیے بہترین اداکار کے ایوارڈ کے لیے بھی نامزد کیا گیا ہے۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here